یوٹیلٹی اسٹورز : دو ارب روپے کا رمضان پیکج منظور


اسلام آباد: وفاقی حکومت نے یوٹیلیٹی اسٹورزکے لیے دو ارب روپے کا رمضان المبارک پیکج منظور کرلیا ہے۔

ہم نیوز کے مطابق ایم ڈی یوٹیلٹی اسٹورز ذوالقرنین خان نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ  یوٹیلٹی اسٹورز پر فوڈ اتھارٹیز کے اسٹینڈرڈز نافذ کیے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں 150 ارب ڈالرز مالیت کی ریٹیل مارکیٹ ہے۔ انہوں نے اعلان کیا کہ پاکستان میں نئے یوٹیلیٹی اسٹورز کھولے جائیں گے۔

وفاقی ٓحکومت کے اعلان کردہ پیکج کے تحت صارفین کو مختلف اشیا پر چار سے 50 روپے تک کا ریلیف فراہم کیا جائے گا۔

14 جنوری 2019 کو یوٹیلٹی کارپوریشن کے چیئرمین ذوالقرنین علی خان نے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ یوٹیلٹی اسٹورز کارپوریشن نے ادارے کی بحالی کے لیے آٹھ سے دس ارب روپے کا بیل آؤٹ پیکیج حکومت سے مانگا ہے۔

انہوں نے واضح کیا تھا کہ یوٹیلٹی اسٹورز بند نہیں کیے جائیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے یتیموں، بیواؤں اور معذوروں کے لیے خصوصی اسکیم شروع کرنے کی ہدایت کی ہے۔

ذوالقرنین علی خان کے واضح اعلان سے وہ افواہیں دم توڑ گئی تھیں جن سے یہ تاثر مل رہا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت یوٹیلیٹی اسٹورز کارپوریشن کو بند کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ اس ضمن میں احتجاج بھی کیے گئے تھے۔

یوٹیلٹی اسٹورز کارپوریشن بورڈ کے چیئرمین ذوالقرنین علی خان نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے یوٹیلٹی اسٹورز کی بحالی کے لیے مکمل تعاون کا یقین دلایا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یوٹیلٹی اسٹورز کی تعداد ساڑھے پانچ ہزار جبکہ ملازمین کی تعداد 14 ہزار سے بھی زائد ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان 152 ارب ڈالر کی مارکیٹ ہے اور ملک میں 16 لاکھ پرچون فروش ہیں لیکن ان کا اعتراف تھا کہ  یوٹیلٹی اسٹورز کا حصہ نہ ہونے کے برابر ہے۔

ذوالقرنین علی خان کا کہنا تھا کہ یوٹیلٹی اسٹورز کے سپلائرز کو واجبات کی ادائیگی کے لیے فوری طور پر پانچ سے چھ ارب روپے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے بتایا تھا کہ اسٹورز کی بحالی کے لیے حکومت سے ایک پیکیج بھی مانگا گیا ہے۔

ایم ڈی یوٹیلٹی اسٹورز کارپوریشن کا کہنا تھا کہ یوٹیلٹی اسٹورز کی نومبر میں سیل 40 کروڑ روپے جب کہ دسمبر میں 45 کروڑ روپے سے زائد رہی تھی۔

اعداد و شمار کے مطابق پی آئی اے اور یوٹیلٹی اسٹورزکارپوریشن سمیت پاکستان میں 140 سرکاری ادارے سالانہ 15 ارب ڈالرز کا نقصان کررہے ہیں۔

دستیاب اعداد و شمارکے مطابق یوٹیلٹی اسٹورزکارپوریشن  کا سالانہ نقصان چھ سے آٹھ ارب روپے ہے۔


متعلقہ خبریں