پاکستان کا چینی سرحد پر بھارتی اقدامات پر اظہار تشویش


اسلام آباد: پاکستان نے چینی سرحد پر بھارتی اقدامات پر تشویش کا اظہار کیرتے ہوئے بھارتی اقدامات کو پڑوسیوں کے لیے خطرہ قرار دیا ہے۔

ترجمان دفترخارجہ زاہد حفیظ نے ہفتہ وار میڈیا بریفنگ میں کہا کہ بھارت چین تنازعہ کو معاہدوں کے مطابق حل کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری ہے۔ بھارت مسئلہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کےلیے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر فائرنگ کررہا ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی نسل کشی کی جارہی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا بتانا تھا کہ کشمیر میں آج بھی کشمیریوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔ بھارتی فوج ایل او سی سیز فائر معاہدے کی مسلسل خلاف ورزی کررہی ہے۔ پاکستان مسئلہ کشمیر کا پرامن حل چاہتا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ اقوام متحدہ کے ایجنڈے پر طویل عرصے سے موجود ہے۔ بھارت نے کشمیر کے متعلق اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل نہیں کیا۔ بھارتی اقدامات کو سیکیورٹی کونسل میں 3 مرتبہ زیربحث لایا جا چکا ہے۔ بھارت کشمیریوں کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حق خودارادیت دے۔

زاہد حفیظ نے کہا کہ تبلیغی جماعت کو تنقید کا نشانہ بنانا بھارتی حکومت کی مسلم دشمن پالیسیوں کا حصہ ہے۔ بھارت میں اسلامو فوبیا پوری دنیا کے مسلمانوں کے لیے خطرہ ہے۔

مزید پڑھیں: بھارت موجودہ صورتحال کو سمجھنے میں کوئی غلطی نہ کرے، چین

خیال رہے کہ 5 ستمبر کو چین اور بھارت کے درمیان جاری سرحدی کشیدگی ختم کرنے کے سلسلے میں چینی وزیر داخلہ ویئ فینگی کی بھارتی ہم منصب راج ناتھ  سنگھ سے روس کے دارالحکومت ماسکو میں ملاقات ہوئی تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق چین کے وزیر دفاع نے واضح کیا تھا کہ چین اپنی سرزمین کے ایک ایک انچ کا دفاع کرے گا۔

انہوں نے مزید کہا تھا کہ سرحد پر جاری حالات اور تناؤ کی وجہ اور حقیقت بہت واضح ہے اور اس کی تمام تر ذمہ داری بھارت پر عائد ہوتی ہے۔

خیال رہے کہ چین اس سے قبل بھی بھارت پر واضح کر چکا ہے کہ وہ موجودہ صورتحال کو سمجھنے میں کوئی غلطی نہ کرے۔

جولائی میں  چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اپنے بیان میں وارننگ دی تھی کہ بھارتی سرحدی دستوں نے لائن آف ایکچول کنٹرول کی خلاف ورزی کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کی جانب سے جان بوجھ کر چینی افسروں اور فوجی جوانوں کو اشتعال دلایا دلا جا رہا ہے جو مسلح تصادم اور انسانی جانوں کی ہلاکت کا سبب بن رہی ہے۔

چین نے کہا تھا کہ وہ اپنی سرحدی خودمختاری کے تحفظ کو ہر صورت یقینی بنائے گا۔


متعلقہ خبریں