فیصل واوڈا پر 50 ہزار روپے جرمانہ

فیصل واوڈا پر 50 ہزار روپے جرمانہ

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے وفاقی وزیر فیصل واوڈا پر 50 ہزار روپے کا جرمانہ عائد کر دیا۔

وفاقی وزیر فیصل واوڈا کے خلاف نااہلی کی درخواستوں پر الیکشن کمیشن میں سماعت ہوئی۔ چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 5 رکنی بینچ نے سماعت کی۔

وکیل کی عدم پیشی پر الیکشن کمیشن نے فیصل واوڈا پر 50 ہزار روپے کا جرمانہ عائد کر دیا اور الیکشن کمیشن نے وفاقی وزیر فیصل واوڈا کو اگلی سماعت پر ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا۔

الیکشن کمیشن نے فیصل واوڈا کے معاون وکیل کو دلائل دینے سے بھی روک دیا۔

چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ گزشتہ سماعت پر امریکی شہریت پر وضاحت کا موقع دیا تھا۔ الیکشن کمیشن میں فیصل واؤڈا کے پاس امریکی شہریت تسلیم کی گئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ فیصل واؤڈا کی جانب سے مزید التوا کی درخواستیں مسترد کرتے ہیں۔ فیصل واؤڈا کے عدم تعاون پر الیکشن کمیشن تحقیقاتی اداروں کی مدد لینے پر غور کر رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: سیاسی دکان چمکانے کیلئے اداروں کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے،وزیر خارجہ

درخواست گزارنے فیصل واوڈا کو بطور وفاقی وزیر کام سے روکنے کی اپیل کی۔ رکن پنجاب الیکشن کمیشن  نے دوران سماعت کہا کہ آپ کوآج دلائل کا آخری موقع دیا گیا تھا اور آپ اسٹے کی درخواست دے رہے ہیں۔

درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ آپ اگر میری درخواست مسترد کرتے ہیں تودلائل دے دوں گا۔

چیف الیکشن کمشنر نے سماعت 24 فروری تک ملتوی کرتے ہوئے کہا کہ فیصل واوڈا کے وکیل کی موجودگی میں دلائل دیں۔


متعلقہ خبریں