سابقہ بیوی کو 25 سال خدمت کے عوض 5 کروڑ روپے تنخواہ دی جائے، عدالت کا شوہر کو حکم


اسپین کی  عدالت نے ایک شخص کو حکم دیا ہے کہ وہ اپنی سابقہ بیوی کو 25 سال گھریلو خدمت کرنے پر 2 لاکھ یورو یعنی پانچ کروڑ روپے تنخوا کی مد میں ادا کرے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق جنوبی اندلس کے علاقے کی ایک عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ  1995 سے 2020 کے عرصے کے دوران ملک میں مقررہ کردہ کم سے کم تنخواہ کی بنیاد پر شوہر کو حکم دیا گیا ہے وہ مذکورہ رقم اپنی سابقہ اہلیہ کو ادا کرے۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ شادی کے بعد سے بیوی نے اپنے آپ کو ‘بنیادی طور پر گھر میں کام کرنے کے لیے وقف کر دیا تھا،جن میں خاندان کی دیکھ بھال اور دیگر امور شامل تھے۔

میاں بیوی نے اپنے بچوں کو زہر دینے کے بعد خود بھی زہر پی لیا

خاتون نےعدالت سے استدعا کی تھی کہ 25 سال تک ان کے شوہر بغیر کسی معاوضے کے ان سے کام کرایا تھا۔

سابق بیوی کے وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ اتنے عرصے تک یہی کام کوئی گھریلو ملازم کرتا تو اس کا معاوضہ لاکھوں ڈالر بنا تھا اس لیے عدالت شوہر کو یہ معاوضہ ادا کرنے کا حکم دے۔

 


متعلقہ خبریں