سیاسی رہنماؤں نے سپریم کورٹ کا فیصلہ خوش آئند قرار دے دیا


اسلام آباد:  سپریم کورٹ کی جانب سے الیکشن کمیشن اور سردارایاز صادق کی درخواست پر کاغذات نامزدگی سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل ہونے کو مختلف سیاسی رہنماؤں نے خوش آئند قرار دیا ہے تا ہم اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ نامزدگی فارم سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کو معطل کیا گیا ہے مسترد نہیں۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما قمر زمان کائرہ  نے کہا کہ سپریم کورٹ کی جانب سے نوٹس لینا اچھی بات ہے، فیصلہ معطل ہونے سے مراد ختم  ہو جانا نہیں جب تک فیصلہ مسترد نہیں ہوتا ہائی کورٹ کا فیصلہ اپنی جگہ قائم ہے، انہوں نے کہا کہ ہائی کورٹ کے فیصلے سے سیاسی جماعتوں میں تشویش تھی لیکن اب دیکھنا یہ ہے کہ سپریم کورٹ کا حتمی فیصلہ کیا آتا ہے۔

سید خورشید شاہ نے اپنے ردعمل میں سپریم کورٹ کے فیصلے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ فیصلے میں پارلیمنٹ کی بالادستی کو تسلیم کیا گیا ہے، انہوں نے کہا کہ کاغذات نامزدگی میں ترمیم کا اختیار پارلیمنٹ کو ہے۔

جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے سپریم کورٹ کے فیصلے کو مناسب اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 62 ،63 کو یقینی بنانے کے لیے سپریم کورٹ کے ہاتھ کھلے ہیں، سپریم کورٹ بھی کام کرسکتی ہے اور آرڈیننس کے ذریعے بھی ہو سکتا ہے۔

سراج الحق نے کہا کہ اصلاح اپنی جگہ لیکن الیکشن وقت پر ہونے چاہیئں سپریم کورٹ انتخابات کا بروقت انعقاد یقنینی بنائے۔

سپریم کورٹ آف پاکستان نے الیکشن کمیشن اور سردار ایاز صادق کی درخواست پر کاغذات نامزدگی سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کردیا ہے۔


متعلقہ خبریں