پاکستان کی معاشی بحالی کاقومی پلان تیار

shehbaz sharif

اسرائیلی وزیر کی غزہ پر ایٹم بم گرانے کی دھمکی شہبازشریف کا ردعمل آگیا


وزیراعظم شہباز شریف کی زیر صدارت اعلی سطح کا اجلاس ہوا جس میں  آرمی چیف جنرل سید عاصم منیرنے بھی  شرکت کی۔

اجلاس میں وفاقی وزرا اور وزرائے اعلیٰ بھی شریک ہوئے، اعلامیہ کے مطابق اجلاس میں پاکستان کی معاشی بحالی کا قومی پلان تیار کیا گیا۔

اجلاس میں مفصل ‘اقتصادی بحالی کے منصوبے’ کی نقاب کشائی کی گئی،معاشی بحالی پلان کا مقصد قومی حکمت عملی اور بحرانوں سے نجات دلانا ہے۔

روس سے خام تیل کی آمد: ایک اور وعدہ پورا کردیا، شہبازشریف

اسپیشل انوسٹمنٹ فسیلی ٹیشن کونسل قائم کر دی گئی،کونسل کامقصد غیر ملکی سرمایہ کاروں کی راہ ہموار کرنا ہے۔

منصوبوں کوتیزرفتاری سےآگےبڑھانےکیلئےخصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل کاقیام بھی عمل میں لایا گیا،زراعت،لائیو اسٹاک ،کان کنی کے شعبوں میں پاکستان کی اصل صلاحیت سے استفادہ کیا جائیگا

ان شعبوں کےذریعے مقامی پیداواری صلاحیت میں اضافہ کیا جائے گا،منصوبے پر عملدرآمد کو تیز کرنے کیلئے ایس آئی ایف سی بنائی گئی ہے۔

منصوبے کے تحت وفاق او ر صوبائی حکومتوں کے درمیان اشترا کی عمل پیدا کیا جائے گا ،دقت کا باعث بننے والے دفتری طریقہ کار اور ضابطوں میں کمی لائی جائے گی۔

مہنگائی اتنی ہے کہ غریب آدمی کا 50 ہزار میں بھی گزارا نہیں ہو رہا،شہبازشریف

تعاون اور اشترا کی عمل کا طریقہ کار اختیار کیا جائے گا ، سرمایہ کاری اور منصوبوں سے متعلق بروقت فیصلہ سازی یقینی بنائی جائے گی۔

وفاق اور صوبوں میں ہم آہنگی لائی جائے گی آرمی چیف جنرل سید عاصم منیر نے بھی اجلاس سے خطاب کیا۔

آرمی چیف نے کہا کہ معاشی بحالی کے پلان پر عملدرآمد کی کوششوں کی پاک آرمی حمایت کرتی ہے۔

معاشی پلان کو سماجی و معاشی خوشحالی ، اقوام عالم میں جائز مقام واپس لینے کی بنیاد سمجھتے ہیں ۔

آرمی چیف سے برطانوی چیف آف جنرل اسٹاف کی ملاقات، مختلف امور پر تبادلہ خیال

اس موقع پر وزیر اعظم شہبازشریف نے اپنے خطاب میں کہا کہ حکومت کو ورثے میں تباہ حال معیشت ملی۔

ملک کو بحرانوں سے نکال کر تعمیر و ترقی کی طرف لا رہے ہیں ،معاشی بحالی کیلئے براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کا کلیدی کردار ہے۔

ابھی بہت سے چیلنجز ہمارے سامنے ہیں ،حکومت نے ایک جامع حکومتی طرز عمل اپنانے کا فیصلہ کیا۔

عدم استحکام کیلئے بیرونی اور اندرونی قوتوں میں گٹھ جوڑبے نقاب ہو چکا، آرمی چیف

یہ طرز عمل موثر نفاذ اور عملدرآمد کیلیے شراکت داری کو فروغ دیتا ہے،سرمایہ کاری سے نوجوانوں اور خواتین کیلئے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔

آئیے ہم سب مل کر کام کرنے کا عزم کریں،کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے اور اپنی توجہ اور سمت میں یک جان رہیں گے۔

ہم پاکستان اور اس کے عوام کی تقدیر بدل سکتے ہیں،عوام کا حق ہے انہیں معاشی ترقی اور خو حالی سے ہم کنار کیا جائے۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں