یونان حادثہ، کشتی میں سوار پاکستانیوں کی تعداد 350 ہے، وزیر داخلہ

یونان حادثہ، کشتی میں سوار پاکستانیوں کی تعداد 350 ہے، وزیر داخلہ

فائل فوٹو


اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ کشتی میں سوار پاکستانیوں کی اب تک کی تعداد 350 ہے جب کہ 281 فیملیز نے رابطہ کیا ہے کہ ان کے بچے اس حادثے کا شکار ہو سکتے ہیں۔

یونان انسانی سمگلنگ میں ملوث گینگ لیڈر پکڑا گیا

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما رانا ثنا اللہ نے قومی اسمبلی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشتی میں 400 لوگوں کی گنجائش تھی لیکن اس میں 700 افراد سوار کیے گئے، کشتی راستے میں حادثے کا شکار ہو گئی۔

انہوں نے کہا کشتی میں سوار پاکستانیوں کی اب تک کی تعداد 350 ہے، حادثے میں بچائے گئے 104 افراد میں 12 پاکستانی ہیں، شاید کسی دہشت گردی کے واقعے میں بھی اتنی جانیں نہیں گئیں۔

رانا ثنا اللہ نے کہا کہ 82 نعشیں سمندر سے نکال لی گئی ہیں، نادرا کی ٹیمیں ڈی این اے کے ذریعے شناخت کی کوشش کررہی ہیں، پاکستان میں 281 فیملیز نے رابطہ کیا ہے کہ ان کے بچے اس حادثے کا شکار ہو سکتے ہیں، فیملیز سے رابطے کے لیے متعلقہ ڈیسک بھی قائم کردی گئی ہے۔

یونان حادثہ،آدھی رات کو کشتی ہچکولے کھا کر ڈوب گئی، بچ جانے والے مسافر کے دردناک انکشافات

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا کہ متاثرہ خاندانوں کے نمونے لیے جا رہے ہیں تاکہ شناخت ہو سکے، 193 ڈی این اے سیمپلز حاصل کر لیے گئے ہیں۔


متعلقہ خبریں