پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے باوجود سبزیوں کی قیمتیں برقرار


پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں نمایاں کمی کے باوجود شہریوں کیلئے روز مرہ کی اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں کمی نہ کی جا سکی ۔

تفصیلات کے مطابق مہنگائی کا جن بوتل سے نکلا ہے لیکن واپس جانے کا نام ہی نہیں لے رہا ہر چیز عوام کی پہنچ سے دور ہوتی جارہی ہے ۔راولپنڈی کے اتوار بازار میں ادرک 4 سو 50روپے ،پیاز 2 سوروپے ،آلو 100روپے، ٹماٹر 100روپے،بند گوبھی 1 سو 20 روپے، لہسن 5 سو روپے کلو میں فرخت ہورہا ہے۔

پیٹرول سستا ہونے کے بعد اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں کمی کا امکان

بازار میں آنے والے شہری قیمتیں سن کر  آگ بگولہ ہونا شروع ہو گئے، شہریوں کا کہنا تھا کہ پیٹرولیم مصنوعات اور ڈالر کی قیمتوں میں کمی کا عام عوام کیا کرے گی جبکہ اشیاضروریہ ہماری پہنچ سے باہر ہوتی جارہی ہیں ۔

اتوار بازار میں فروٹ کے ریٹس میں بھی کمی نہ ہو سکی، سیب 150 سے 300 روپے کلو ملا تو انار350 روپے کلو اور انگور 200 سے 350 روپے کلو میں دستیاب ہے۔

سعودی عرب میں سونے کی قیمتوں میں کمی

دوسری جانب پشاور کی بڑی تجارتی مارکیٹ میں بھی شہریوں کا کہنا ہے کہ پیٹرول سستا ہونے کا ہمیں کوئی فائدہ نہیں ہو رہا ہے ہر چیزپہنچ سے باہر ہے ۔

تاجرکا کہنا ہے کہ جب تک پیٹرولیم مصنوعات کیساتھ ٹرانسپورٹرز کے کرایے میں کمی نہیں ہوگی، تب تک ہم اشیا کی قیمتوں میں کمی نہیں کر سکتے ۔

چار ماہ کے دوران پیٹرول 64 روپے 4 پیسے سستا

تاجر کا مزید کہنا تھا کہ پیٹرول اور ڈیزل کے ریٹ کم ہوتے رہتے ہیں لیکن ٹرانسپورٹر کے کرایے میں  بھی کمی لانی چاہیے تاکہ ہم عوام کو بھی ریلیف دے سکیں۔

جب تک کرایے میں کمی نہیں آتی اس وقت تک ہم عوام کو کوئی ریلیف نہیں دے سکتے اور نہ ہی قیمتوں میں کمی کر سکتے ہیں ۔


متعلقہ خبریں