ایف بی آر نے دسمبر میں ایک کھرب سے زائد کے محصولات جمع کرکے تاریخ رقم کردی


فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ماہ دسمبر 2023 میں ایک کھرب روپے سے زائد کے محصولات جمع کرکے تاریخ رقم کر دی۔

اس ماہ کے دوران 1021 ارب روپے کے محصولات جمع کئے گئے۔ایف بی آرکی جانب سے اتوار کو جاری اعلامیہ کے مطابق دسمبر میں جاری کئے گئے 38 ارب روپے کے ریفنڈز ایڈجسٹ کرنے کے بعد خالص محصولات کی وصولی 984 ارب روپے رہی۔

رواں مالی سال کی پہلی ششماہی کے ہدف 4425 ارب روپے کے مقابلہ میں 4468 ارب روپے جمع کئے گئے۔ رواں مالی سال کی ششماہی کے دوران 4468 ارب روپے کے ریکارڈ محصولات جمع کئے گئے جو پچھلے سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں ایک کھرب روپے سے زیادہ ہیں۔

زرمبادلہ کے ذخائر 12.85 ارب ڈالر ہوگئے، اسٹیٹ بینک

گذشتہ مالی سال کی پہلی ششماہی میں جاری کئے گئے 177 ارب روپے کے ریفنڈز کے مقابلہ میں اس سال 230 ارب روپے کے ریفنڈز جاری کئے گئے۔ایف بی آر کے مطابق درآمدات میں کمی کے دباؤ کے اثرات کو جذب کرنے کے لئے ڈومیسٹک ریونیو بڑھایا گیا۔

براہ راست اور بالواسطہ ٹیکسوں کے تناسب میں بھی تبدیلی دیکھنے میں آئی ہے، مالی سال کی پہلی ششماہی میں براہ راست ٹیکسوں کا حصہ بڑھ کر 49 فیصد ہو چکا ہے،ایف بی آرکے مطابق صرف دسمبر کے مہینے میں براہ راست ٹیکسوں کا حصہ 59 فیصد ریکارڈ کیا گیا۔

رواں مالی سال کی پہلی ششماہی کے دوران براہ راست ٹیکسوں کی مد میں 41 فیصد اضافہ ہوا ہے، ایف بی آر نے گذشتہ دو سال میں ودہولڈنگ ٹیکس کا حصہ 70 فیصد سے کم کرکے 55-58 فیصد کر دیا ہے۔

چیئرمین ایف بی آر نے ممبر کسٹمز (آپریشنز) اور ممبر آئی آر (آپریشنز) اور ان کی ٹیموں کوبہترین کارکردگی پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ ٹیکس دہندگان کے مسلسل تعاون اور درست ڈیکلریشنز کے بغیر یہ ہدف حاصل نہیں کیا جا سکتا تھا۔


متعلقہ خبریں