موٹرسائیکلز اور تھری وہیلرزکی فروخت میں سالانہ بنیاددوں پر 14 فیصد کمی

موٹرسائیکلز

موٹرسائیکلز سے متعلق اہم خبر آگئی


ملک میں موٹرسائیکلز اور تھری وہیلرزکی فروخت میں جاری مالی سال کے پہلے 6 ماہ میں سالانہ بنیاددوں پر 14 فیصد کی کمی ہوئی ہے۔

صدرعارف علوی کا پی ٹی آئی سے پتہ صاف ہو چکا ہے، شیر افضل مروت

آل پاکستان آٹو مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کے اعدادوشمار کے مطابق جولائی سے دسمبر تک کی مدت میں ملک میں 51821 یونٹس موٹرسائیکلز اور تھری وہیلرزکی فروخت ریکارڈکی گئی جو گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 14 فیصد کم ہے۔

گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں ملک میں 627835 یونٹس موٹرسائیکلز اور تھری وہیلرزکی فروخت ریکارڈکی گئی تھی ۔

دسمبر 2023 میں ملک میں 32362 یونٹس موٹرسائیکلز اور تھری وہیلرزکی فروخت ریکارڈکی گئی جو دسمبر 2022 کے مقابلہ میں 21 فیصد کم ہے۔ دسمبر 2022 میں ملک میں 103899 یونٹس موٹرسائیکلز اور تھری وہیلرزکی فروخت ریکارڈکی گئی تھی۔

شہبازشریف کی مجبوری دیکھتے ہوئے چیئرمین پی سی بی کا عہدہ چھوڑا،نجم سیٹھی

نومبر کے مقابلہ میں دسمبر میں موٹرسائیکلز اور تھری وہیلرزکی فروخت میں ماہانہ بنیادوں پر 7 فیصد کی کمی ہوئی۔

نومبر میں ملک میں 88493 یونٹس موٹرسائیکلز اور تھری وہیلرزکی فروخت ریکارڈکی گئی جو دسمبر میں کم ہو کر 82362 یونٹس ہو گئی۔

دوسری جانب 2023 میں ہونڈا، یاماہا اور سوزوکی موٹر سائیکل کی قیمتوں میں بڑا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

یاماہا جیسی کمپنیوں نے اپنے صارفین کو نہیں بخشا اور بغیر کسی وجہ کے قیمتوں میں اضافہ کیا، 2023 میں موٹر سائیکل کی قیمتوں میں نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا۔

تمام پیغامات صرف 8171 سے بھیجے جاتے ہیں ،بی آئی ایس پی

اس وقت سب سے مہنگی مین اسٹریم موٹرسائیکل سوزوکی GR 150 ہے جس کی قیمت547000 روپے ہے۔ اس موٹر سائیکل کی قیمت میں بھی 2023 میں سب سے زیادہ اضافہ ہوا، اس کی قیمت میں 162000 روپے کا اضافہ ہوا۔

۔CD 70 اور CD 70 Dream کی قیمتوں میں گزشتہ 12 مہینوں میں 36000 اور 39000کا اضافہ ہوا۔ لوگوں کے پسندیدہ CG 125 کی قیمت میں 234900 روپے ہیایک سال میں اس کی قیمت میں 185900روپے کا اضافہ ہوا ہے۔

مقابلے میں پیچھے نہ رہنے کیلئے سوزوکی نے بھی 2023 میں موٹرسائیکل کی قیمتوں میں بڑے پیمانے پر اضافہ کیا۔ GD 110S اور GS 150 کی قیمتوں میں روپے کا بڑا اضافہ ہوا ہے۔

پی ٹی آئی خواتین اور مخصوص نشستوں سے بھی محروم ہوگئی

108000روپے اور 116000روپیکا اضافہ ہوا ہے۔یاماہا نے فروری میں تمام موٹرسائیکلوں کے لیے 2023 کی پہلی قیمت میں اضافے کا اعلان کیا جس کی قیمت میں روپے تک کا اضافہ کیا گیا۔

3500 کمپنی نے دسمبر میں قیمتوں میں ایک اور اضافے کے ساتھ سال کا اختتام کیا۔YB 125Z فی الحال یاماہا کی رینج میں سب سے زیادہ سستی بائیک ہیاس 396000 پر روپے لاگت آئی۔

جنوری 2023 میں 305500 واپس YBR 125 اور 125G کی قیمت اب روپے ہے 435500 اور روپے بالترتیب 471000 (میٹ گرے رنگ کے لیے 474,400 روپے)۔ ان کی قیمتوں میں 99500اور گزشتہ سال کے دوران بالترتیب 121500 کا اضافہ ہوا ہے۔


متعلقہ خبریں