پی ٹی آئی پر پارلیمانی سیاست کے دروازے بند ہو گئے

پی ٹی آئی

تحریک انصاف کا 100 حلقوں میں فارم 47 کیخلاف عدالت جانے کا فیصلہ


عام انتخابات سے قبل انتخابی نشان چھن جانے کے بعد پاکستان تحریک انصاف پر پارلیمانی سیاست کے دروازے بند ہوگئے ہیں۔

الیکشن رولز 2017 کے رولز 94 کے مطابق آئندہ انتخابات میں آزاد امیدوار کامیابی کی صورت میں اسی سیاسی جماعت میں شامل ہوسکیں گے جسے الیکشن کمیشن نے انتخابی نشان جاری کیا ہوا۔ رولز کے تحت پاکستان تحریک انصاف کے آزاد امیدوار کامیابی کی صورت میں تحریک انصاف میں شمولیت اختیار نہیں کرسکیں گے۔

نگران وزیرتجارت کو وزارت داخلہ کااضافی چارج دے دیا گیا

انٹرا پارٹی الیکشن پارٹی آئین کے مطابق نہ کرنے پر پاکستان تحریک انصاف سے انتخابی نشان واپس لے لیا گیا اور سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد پاکستان تحریک انصاف انتخابی دوڑ سے باہر ہوگئی ہے۔ پارٹی کے امیدوار آزاد حیثیت سے انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔

شاہد آفریدی کی شعیب ملک اورثناء جاوید کو شادی کی مبارکباد

الیکشن رولز 2017 کے سیکشن 94 کے مطابق آزاد امیدوار 3روز میں سیاسی جماعت میں شمولیت کا اعلان کرے گا اسی رولز 94 میں وضاحت کی گئی ہے۔ سیاسی جماعت کا مطلب جسے الیکشن کمیشن کی جانب سے انتخابی نشان جاری کیا گیا ہے جس کی وضاحت یوں کی گئی ہے:

(For the purpose of this rule, the expression “political party” means a political party to which a symbol has been allocated by the Commission)

دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف کے سابق وزیر تیمور سلیم جھگڑا نے  کہا ہے کہ رولز کے حوالے سے علم ہے لیکن متبادل آپشنز پر غور کررہے ہیں۔

دوسری جانب قومی اسمبلی میں اقلیتوں کی مخصوص نشستوں کیلئے امیدواروں کی حتمی فہرست جاری کردی گئی ہے۔

لاہور ہائیکورٹ نے نگران وزیراعظم کوعہدے سے ہٹانے کی درخواست نمٹادی

مسلم لیگ ن 10،ٹی ایل پی 2،جے یو آئی کے 5 ،جماعت اسلامی 4، پیپلزپارٹی 7اورایم کیو ایم کے 3 امیدوار لسٹ میں شامل ہیں،پی ٹی آئی کے کسی امیدوار کا نام اقلیتوں کی فہرست میں شامل نہیں۔


متعلقہ خبریں