عمران خان کیخلاف جو فیصلہ آیا ہے وہ ہم سب کیلئے سبق آموز ہے ، شہباز شریف


پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور سابق وزیراعظم میاں شہباز شریف نے عمران خان کو 10 سال کی سزا ہونے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ بات اچھے یا برے فیصلے کی نہیں ہے، بلکہ قانون کی ہے۔ 

ہم نیوز کے پروگرام”فیصلہ آپ کا عاصمہ شیرازی کیساتھ” میں گفتگو کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ جب کسی کو وزیراعظم کا عہدہ ملتا ہے تو پھر سرکاری راز کو راز رکھنا چاہیے، جس طریقے سے سائفر لہرایا گیا اس کی تشہیر کی گئی وہ سب کے سامنےہے،ہماری حکومت کو بدنام اور امپورٹڈ حکومت کہا گیا۔

سیکریٹ ایکٹ ہر کسی کو پابند بناتا ہے جو قومی راز ہیں وہ سینے میں دفن رہنے چاہییں۔ عمران خان کیخلاف جو فیصلہ آیا ہے وہ ہم سب کیلئے سبق آموز ہے ۔

نواز شریف پر ظلم کرنے والے اپنے انجام کو پہنچ گئے، مریم نواز

انہوں نے کہا کہ سابق چیئرمین پی ٹی آئی نے ایک اینٹ نہیں لگائی بلکہ اینٹ سے اینٹ بجا دی،  انہوں نے قوم کو جلاو گھیراو کی طرف لگا دیا ، بیانیے اور سازش میں زمین و آسمان کا فرق ہوتا ہے۔

9مئی کو افواج پاکستان کے خلاف سازش اور غداری کی گئی ،  جنرل عاصم منیر کیخلاف غداری کی گئی ، جناح ہاوس کو جلایا گیا،  کیا مہذب معاشرہ 9 مئی جیسے واقعات برداشت کرسکتا ہے۔

حکومت نے آئی ایم ایف کی ہدایت پر ایف بی آر کو دو حصوں میں تقسیم کر دیا

شہباز شریف نے کہا کہ 9 مئی کو آرمی چیف جنرل عاصم منیر کو ہٹانے کی کوشش کی گئی، اگر 9مئی کونظرانداز کیا گیا تو ملک کا شرازہ بکھر جائے گا، اس دن  جو ہوا جو کبھی دشمن بھی نہیں سوچ سکتا تھا۔

سابق چیئرمین پی ٹی آئی اور ان کے ٹولے نے آرمی چیف کیخلاف سازش کی، چاہتے تھے آرمی چیف کو ہٹایا جائے اور فوج میں تقسیم آئے،  ان کی خواہش تھی کہ فوج میں ان کے من پسند کے لوگ آ جائیں۔ نو مئی واقعات میں کئی حاضر اور ریٹائرڈ فوجیوں کی فیملی کے ممبرز بھی ملوث تھے جسے ادارے نے پکڑا۔

اسٹیٹ بینک نے نئے کرنسی نوٹوں کے اجرا پر کام شروع کردیا

سابق وزیراعظم نے کہا کہ 2018کےالیکشن کے بعد چارٹر آف ڈیموکریسی کے بارے میں کہا تھا،  میرے چارٹر آف ڈیموکریسی کو ہتک آمیز انداز میں بار بار رد کیا گیا۔ جب سابق چیئرمین پی ٹی آئی کو ڈائیلاگ کی پیشکش کی تو اسے حقارت سے ٹھکرادیا گیا تھا۔

جب ملک کو کرونا جیسی وبا کا سامنا تھا تو اس وقت عمران خان نے تکبر سے ہمارے ساتھ بیٹھنے سے انکار دیا تھا۔

وزیراعلی پنجاب کے حوالے سے سوال پر صدر مسلم لیگ  شہباز شریف نے کہا کہ ابھی پنجاب کے وزیراعلیٰ کے حوالے سے کوئی نام فائنل نہیں ہوا، نواز شریف سے مشاورت کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب کا فیصلہ کریں گے۔


متعلقہ خبریں