وزیر اعظم سے گورنر سندھ اور ایم کیو ایم وفد کی ملاقات


اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان سے متحدہ قومی مومنٹ ( ایم کیو ایم) کے وفد اور گورنر سندھ نے ملاقات کی، اس دوران سیاسی امور، صدارتی انتخاب، صوبہ سندھ اور خصوصا کراچی اور حیدر آباد  کے مسائل کے حوالے سے گفتگو کی گئی۔

ایم کیو ایم کا وفد وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی خالد مقبول صدیقی، وزیر قانون ڈاکٹر فروغ نسیم، امین الحق، کنور نوید، نسرین جلیل اور میئر کراچی وسیم اختر پر مشتمل تھا۔

ملاقات میں گورنر سندھ عمران اسمعیل اور وزیر اعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق بھی موجود تھے۔ ایم کیو ایم کے وفد اور وزیر اعظم نے کراچی اور حیدرآباد کے مسائل اور ان کے حل کے لیے اقدامات پر تفصیلی گفتگو کی۔

وزیرِ اعظم کی جانب سے کراچی اور حیدر آباد کے عوام کو درپیش مسائل کے حل کے کے لیے وفاقی حکومت کی جانب سے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

ملاقات کے بعد وفاقی وزیر قانون بیرسٹر فروغ نسیم نی ہم نیوز سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کی کراچی کے حوالے سے اچھے خیالات ہیں اور وہ کراچی کے مسائل اور ایشوز سے آگاہ ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم سے ملکر ایسا لگا جیسے کوئی اپنے بڑے بھائی سے ملتا ہے۔ ماقات کے دوران ایم کیو ایم کے رہنماؤں کی وزیر اعظم سے کراچی کےمسائل اور ان کے حل پر بات ہوئی۔

فروغ نسیم کے مطابق وزیراعظم نےتمام مسا ئل حل کرنے کی  یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ وزیراعظم سے ملاقات کے بعد شہر قائد کے مسائل حل ہوں گے۔

گورنر سندھ کی وزیراعظم سے ملاقات

وزیر اعظم عمران خان سے گورنر سندھ عمران اسمعیل کی ملاقات کے دوران سندھ کی مجموعی صورتحال، خصوصا کراچی کی موجودہ صورتحال اور عوام کو درپیش مسائل پر گفتگو ہوئی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شہر قائد کے مسائل کا مکمل ادراک ہے، کراچی جیسے اہم شہر میں بعض مقامات پر بنیادی سہولتوں تک کا فقدان لمحہ فکریہ ہے۔

عمران خان نے کہا کہ ملکی معیشت کی ترقی و استحکام میں کراچی کا کردار کلیدی ہے، شہر میں امن و امان کی فضا کو مزید مستحکم کرنے اور عوام کو درپیش مسائل کے مستقل حل کے لیے پی ٹی آئی حکومت ہر ممکنہ تعاون فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہے۔

حکومت کی جانب سے اعتماد کا اظہار کرنے اور اہم ذمہ داری سونپے جانے پر گورنر سندھ نے وزیر اعظم کا شکریہ ادا کیا۔


متعلقہ خبریں